نیکیاں زندہ ہیں

ہماری کمیٹی کھل گئی۔ ہم سب بہت خوش تھے۔ تیزی سے گھر کا تعمیری کام شروع کردیا گیا ۔
ابھی چند دن گزرے ھی تھے کہ ایک دن اچانک طوفانی بارش ہوگئی جس نے گھر کی تعمیر کو بہت نقصان پہنچایا ۔ ہمارے ایک پڑوسی کی چھت بھی گرگئی جس کے باعث انھیں کافی مشکلات کا سامنا تھا۔ فی الوقت ان کے پاس اتنے پیسے بھی میسر نہیں تھے کہ فوری چھت بنوادیتے۔ابو کو جب علم ہوا تو انھوں نے اپنا کام روک کر انکی چھت مرمت کروادی۔ اس پر ان لوگوں نے ابو کو بہت دعائیں دیں۔
اللہ کا کرم ہوا ہمارا گھر بھی بہت جلدی مکمل ہوگیا اور بہترین بنا۔ ابو نے باہر ذرا اونچا سا سائیڈپر ایک چبوترا بھی بنوادیاتاکہ آتے جاتے راہگیر جب تھک جا ئیں تو سستا لیا کریں اور ایسا ہوا بھی۔ اکثر بزرگ  کچھ دیر آرام کی غرض سے بیٹھے نظر آتے اور دعائیں دیتے۔ ایسے  بہت سے نیکی کے کام ابو کرتے رہے جب تک حیات رہے۔ ہم سب بہن بھائیوں نے نیکیوں کا سبق ابو سے ہی سیکھا۔
کچھ عرصے بعد ابو اللہ کو پیارے ہوگئے۔مگر آج تک ابو کی کی گئی نیکیاں زندہ ہیں۔ پڑوسی روز اپنی چھت کو دیکھتے ہیں اور دعائیں دیتے ہیں۔ تھکے ہارے راہگیر چبوترے پر بیٹھتے ہیں تو دل سے ابو کے لیے دعاگو ہو جاتے ہیں۔ہم نے چبوترے کے اک طرف واٹر کولر کا بھی اضافہ کردیا ہے جس میں کبھی کبھی مشروب بھی ڈال دیتے ہیں۔ ابو کی وصیت تھی کہ کبھی بھی نیکی کرنے میں تاخیر نہ کرنا نہ پیچھے ہٹنا کیونکہ کچھ نیکیاں ایسی ہیں جو مرنے کے بعد بھی زندہ رہتی ہیں!


اپنی قیمتی رائے سے آگاہ کیجیے

Invalid Input
Invalid Input
Invalid Input
Invalid Input