Jo ap ny kaha

’’ہدایت کے سنگ میل: تم ام عبداللہ ہو‘‘ بہت پیاری تحریر تھی۔ ’’ کانٹوں کے بیج‘‘  اچھی جارہی ہے۔ ’’چھوٹی کہانی بڑا سبق‘‘ بلاشبہ سبق آموز تھی۔عالیہ عبدالکلام کی  عافیہ صدیقی پر نظم بھی  بڑی موثر تھی۔’’ پکوان ‘‘ اور ’’تندرست رہیں‘‘  بھی دلچسپ تھے۔ (امِّ وردہ، حسن ابدال)

جواب: رائے دینے کا بہت شکریہ! امید ہے آئندہ  بھی ای میل کرتی رہیں گی۔

پیامِ حیاء کی ہر تحریر بڑی دلچسپ لگی۔’’ہمارا پاکستان حرف اول‘‘، ٹیکنالوجی، ’’تم ام عبداللہ ہو‘‘ اور ’’آپ سے کچھ کہنا ہے‘‘  بہت خوب کہا ہے۔  (فاطمہ سعید الرحمٰن، کراچی)

مزید پڑھیے: جو آپ نے کہا

Chowti kahani barha sabq

کہتے ہیں ۔ایک بڑھیا تھی جس کا ایک ہی بیٹا تھا۔ہر ماں کی طرح اپنے بیٹے سے بہت زیادہ پیار کرتی تھی۔ اتفاق سے بچہ بیمار ہوا اور کچھ عرصہ کی علالت کے بعد ماں کو داغ ہجرت دے کر ابدی نیند سو گیا۔اس دلخراش حادثہ نے ماں کو ہلا کر رکھ دیا۔اس کی دنیا لُٹ گئی۔وہ حواس باختہ ہو کر اپنے مرحوم بیٹے کو حاصل کرنے کے لئے کوشاں ہو گئی۔در بدر جاتی۔ہر کسی کے پاس مدد کی درخواست کرتی کہ کسی طرح اس کا کھویا ہوا بیٹاا سے واپس مل جائے۔
کسی نے اسے بتایا کہ فلاں مقام پر ایک بزرگ اور خدارسیدہ بزرگ رہتے ہیں۔ممکن ہے وہ تمہاری مدد کرسکیں۔

مزید پڑھیے: چھوٹی کہانی بڑا سبق

Seerat un Nabi Quiz

پچھلے کوئزکے جوابات:

 ۱) عبداللہ،  انسیہ، شیما، حضرت حمزہ رضی اللہ عنہ ۲) حربِ فجار ۳) ابو امیہ بن مغیرہ  ۴) اے چادر اوڑھنے والے، کھڑے ہو جاؤ، (لوگوں کو) ڈراؤ اور اپنے رب کی بڑائی بیان کرو۔(سورۃ المدثر) ۵) ذی اعجاز، عکاظ اور یعینہ

 

صحیح جوابات بھیجنے والی خواتین کے نام:

(سحرش مختار۔ لاہور، ام محمد احمد، کراچی، بنت مولانا یاور، صادق آباد، ام مریم، یوکے،  عادلہ   یاسر، ابو ظہبی)

مزید پڑھیے: سیرت النبی ﷺ کوئز

Ebrat Angaiz Waqeat

’’مولوی مصطفی ایک واقعہ بیان کرتے ہیں کہ دلی میں جمنامیں سیلاب آیا جس سے قریب کے قبرستان کی کچھ قبریں اکھڑ گئیں ایک قبر کھلی تو کچھ لوگوں نے دیکھا کہ مردہ پڑا ہوا ہے اور اس کی پیشانی پر ایک چھوٹا سا کیڑا ہے وہ جب ڈنگ مارتا ہے تو پوری لاش لرز جاتی ہے تھرا جاتی ہے اور ا س کا رنگ بدل جاتا ہے تھوڑی دیر بعد جب وہ لاش اپنی اصلی کیفیت پرا ٓجاتی ہے تو وہ پھر ڈنگ مارتا ہے لاش کی پھر وہی کیفیت ہوجاتی ہے ۔ سب دیکھ رہے ہیں اور حیران ہیں ۔

مزید پڑھیے: عبرت انگیز واقعات

Pakwan

عام طور بقر عید پر جب گھر میں بکرے کی سالم ران موجود ہو تو بہت دل چاہتا ہے  خود سے اسے بھونا جائے ۔ ویسے تو یہ کام بہت تھکا دینے والا ہے۔ لیکن جب یہ تیار ہوجائے تو بہت لذیذ اور مزے دار ہوتی ہے ۔ میں نےکوشش کی ھے کہ یہ ترکیب آپ کے لیے بہت آسان کر کے پیش کروں۔
اجزا:
بکرے کی ران ایک عدد تقریبا ڈھائی سے تین کلو وزن 
کچا پپیتا یا گوشت گلانے کا پاؤڈر دو ٹیبل اسپون 
پیاز تین عدد بڑی 
لال مرچ پسی ہوئی ڈیڑھ ٹیبل اسپون 
نمک حسب ذائقہ 
خشخشاش دو ٹیبل اسپون 
بھنے ہوئے چنے دو ٹیبل اسپون

مزید پڑھیے: پکوان: بکرے کی بھنی ہوئی ران